اسلام کے مطابق آم کھانا کیسا ہے سب لوگ یہ ایک بار ضرور پڑھیں

جاتی ہیں اور ان کی خوشبو پوری دکان کو مہکا دیتی ہے دوستو جس طرح تمام جانوروں کا بادشاہ شیر کو کہا جاتا ہے اسی طرح تمام پھلوں کا بادشاہ آم کو کہا جاتا ہے یاد رہے کہ کچھ ایسے میں اور نمکین ہوتے ہیں کچھ کھٹے میٹھے ہوتے ہیں اور کچھ بہت زیادہ میٹھے ہوتے ہیں یہ کیسا پھل ہے جسے چھوٹے بڑے غریب امیر سے بھی بڑے شوق سے کھاتے ہیں آج کی ویڈیو میں ہم آپ کو عام کے فوائد سے آگاہ کرنے جا رہے ہیں کہ جن ناموں کو آپ بڑے شوق سے کھاتے ہیں ان کے کھانے سے آپ کو کیا فائدہ حاصل ہوتے ہیں اور یاد رہے کے ماہرین کے مطابق آم کا مزاج گرم تر ہوتا ہے اس لئے ہم آپ کو یہی بتائیں گے کہ پیارے آقا صلی اللہ علیہ وسلم گرم اشیاء کے اثر کو زائل کرنے کے لیے کیا استعمال فرماتے تھے یہ ویڈیو آپ کے لیے بہت ہی اہم ہیں اس کو میسج مت کیجئے گا اگر آپ ہمارے چینل کی ویڈیو دیکھ رہے ہیں اور ابھی تک آپ نے ہمارے چینل کو سبسکرائب نہیں کیا تو ہماری آپ سے گزارش ہے کہ آپ ہمارے چینل کو ضرور سبسکرائب کریں اور ساتھ لگے بجلی کے بٹن کو بھی درست کر لیں تاکہ آپ کے پاس ٹیچر میں ہماری اپ لوڈ ہونے والی مزید اسلامک اور معلوماتی ویڈیوز کا نوٹیفکیشن پر ملتا ہے پیارے دوستو یہ اللہ تعالی کی شان ہے کہ اللہ تعالی نے کس خوبصورت انداز میں عام کو پتہ چلے لیکن مضبوط چھلکے میں پیک کر کے اپنے بندوں کے لئے پیش کیا ہے اور اس کے اندر گودے میں ایسا گھر دیا کہ جس کی لذت کا جواب نہیں جیسا کہ پہلے بھی ذکر ہوا کہ آج ہم آپ کو یہ بتانے والے ہیں کہ عام کے فوائد کیا ہیں ایّام کے نام کا پتھر پارس اور ریشے معدے پر بوجھ نہیں ڈالتے اس کے لئے اسے دانتوں کی میل کچیل صاف کرتے ہیں اور دانتوں کے مسوڑوں کو مضبوط کرتے ہیں یہ چہرے کی رنگت نکھارتا ہے کیا جاتا ہے یہ ہے کہ ہے ورنہ کسی رکھنے کا خطرہ ہوتا ہے اس پر ایک مضبوط غلام بنایا ہے درست رہتا ہے جو اس کے ارد گرد جم جاتا ہے اس ہے اس لیے دیہاتوں میں ان کو بڑے برتن میں تازہ پانی بھر کر آدھے گھنٹے کے لئے پانی میں رکھا جاتا ہے پھر اسی پانی سے اچھی طرح دھو کر کھایا جاتا ہے ہے تو آپ کو یہ جان کر حیرانی ھوگی کہ اللہ تعالی نے آم کے پھل کے علاوہ کس کس بات تو کال کر لو اور اس کی گلی میں بڑے شفائی اثرات پیدا فرمائے ہیں پرانے حکمہ اب بھی نسل در نسل اس کے پتوں پھولوں سال اور گٹھلی سے نسخہ جات تیار کرتے ہیں ماہرین کے مطابق آم وٹامن ای سے بھرپور ہے جس کے استعمال سے انسان صحت مند اور شاداب رہتا ہے جبکہ یہ وٹامن جلد کو تروتازہ ڈول کی مقدار کم کرتا ہے جب کہ اس میں موجود وٹامن اے بینائی کو کمزور ہونے سے بچاتا ہے اس کے علاوہ یہ پھل سورج کی تیز شعاعوں سے بھی آنکھوں کو خراب ہونے سے بچاتا ہے ماہرین کا کہنا ہے کہ ان میں موجود عرصہ انسانی جسم کے لیے انتہائی مفید ثابت ہوتے ہیں اور جو لوگ عام کا زیادہ استعمال کرتے ہیں ان کے دمے کے مرض میں مبتلا ہونے کے امکانات کم سے کم ہو جاتے ہیں طبی ماہرین کے مطابق آم میں شامل اینٹی آکسیڈنٹ آنتوں اور خون کے کینسر کے خطرے کو کم کرتا ہے جب کہ گلے کے غدود کے کینسر کے خلاف بھی یہ موثر کردار ادا کرتا ہے اور یونیورسٹی کے ماہرین کے مطابق کالج یا بڑی آنت کے سرطان کے خلاف عام ایک اہم مدافعانہ ہتھیار ثابت ہوا ہے اورآم کھانے کے شوقین لوگوں میں اس سرطان کی شرح نمایاں طور پر کم دیکھی گئی ہے ماہرین کا یہ بھی کہنا ہے کہ ان کا استعمال ہڈیوں کی بیماریوں سے بھی محفوظ رکھتا ہے اس میں موجود کیلشیئم ہڈیوں کو مضبوط رکھتا ہے اور ان کھانے کے شوقین افراد میں وقت سے پہلے ہڈیوں کی کمزوری کے امکانات کم ہو جاتے ہیں موجود تھے جنہیں فائبر بھی کہا جاتا ہے آنتوں کی صفائی کرتے ہیں اور نظام ہضم اہم کردار ادا کرتے ہیں ماہرین کا کہنا ہے کہ دل کے امراض میں مبتلا افراد کے لئے عام ایک بہترین پھل ہے اس میں موجود پوٹاشیم پایبر اور دل کی صحت میں اضافے کا باعث بنتے ہیں جب کہ اس میں موجود بڑی تعداد میں پوٹاشیم بلڈ پریشر کو کنٹرول کرنے میں معاون ثابت ہوتا ہے دوستو عام کے فوائد میں یہ بھی شامل ہے کہ عام بلغم کو پتلا کرکے اسے آسانی سے خارج کرتا ہے مادہ منویہ کو گاڑھا کرتا ہے عام کی گٹھلی کو پانی میں رگڑ کر نیم گرم کر کے متاثرہ جگہ پر لیپ کر دیں ہو جائیں گے اور کہ بعض لوگ کچے آم کھانے کے شوقین ہوتے ہیں اکثر حاملہ خواتین بچے اور گھنٹے ہم کھاتی ہیں کچھ کھانے سے حمل ضائع ہونے کا اندیشہ ہوتا ہے اور اکثر عورتوں کا حمل ضائع بھی ہو جاتا ہے کچے آم پکے آم کی نسبت زیادہ گرم ہوتے ہیں اس لیے خواتین احتیاط سے کام لیں دوستو یہاں پر آپ کو بخار کے لیے ایک نسخہ بتاتے ہیں ماہرین کا کہنا ہے کہ ان کی تازہ جڑ بخار کے مریض کے ہاتھ پر پٹی سے باندھی کسی بھی قسم کا بخار ہو اتر جاتا ہے ایک اور مثال ملاحظہ فرمائیے ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر کسی کو زہریلے سانپ نے ڈس لیا ہو تو آم کی گٹھلیاں دو عدد مٹ سیا 3دانے ان دونوں کو پانی میں رگڑ کر مریض کو پلا دیں تھوڑی دیر بعد سردی محسوس ہوگی اور زہر ختم ہو جائے گا اور ساتھ ساتھ تین دن تک پیاز کاٹ کر کھلاتے رہے ہیں اسی طرح کہا جاتا ہے کہ جو مرضی مریض بے ہوش ہو جائے اس کے لیے آم کی گٹھلی اور بیل گری ہم وزن لے کر مناسب مقدار پانی میں جوش دیں جب پانی آدھا رہ جائے تو اتار کر ٹھنڈا کرلیں حسب ضرورت چینی ملا کر مریض کو پلا دیں انشاءاللھ کچھ دیر بعد مریض ہوش میں آ جائے گا دوستوں یاد رہے کہ امام قرطبی اور زود ہضم ہے اور جیسا کہ پہلے بھی ذکر ہوا یہ مزاج کے اعتبار سے گرم تر ہے اس لئے عام کے بعد دودھ پینے کا کہا جاتا ہے کہ ہمارے پیارے آقا صلی اللہ علیہ وسلم کی یہ عادت شریفہ تھی کہ گرم مزاج والی اشیاء کھانے کے بعد دودھ میں پانی ملا کر استعمال فرماتے تھے جیسے کہ روایات سے معلوم ہوتا ہے کہ کھجور جس کا مزاج گرم تر ہے کہ استعمال کے بعد آپ صلی اللہ علیہ وسلم دودھ میں پانی ملا کر نوش فرمایا کرتے تھے کیونکہ ان کا مزاج گرم تر ہے اس لئے چاہیے کہ آم کھانے کے بعد دودھ یا دودھ میں پانی میں ملا کر استعمال کیا جائے تو وضو ہو جائے گا اور ان کے فوائد میں بھی اضافہ ہو جائے گا جیسے کہ ماہرین کا کہنا ہے کہ ان کے بعد دودھ پینے سے جسم میں طاقر آتی ہے دل اور دماغ معدے اور پھپڑوں کو طاقت پہنچاتا ہے ماہرین کے مطابق نہار منہ آم کھانا مضر ہے اور کھٹا آم بھی مضر صحت ہے پختہ شیریں اور بے ریشہ آم پہتریں ہوتا ہے اسی لئے ماہرین کی رائے بھی ہے کہ آم کھانے کے بعد دودھ کی کچی نمکین لسی چاٹی کی لسی پینی چاہیے اس سے کھل کر پیشاب جاری ہوتا ہے اور طبیعت ہلکی پھلکی ہو جاتی ہے اللہ سے دعا ہے کہ اللہ ہمیں دین کی سمجھ نصیب فرمائے اور اس کے مطابق زندگی بسر کرنے کی تو ہمیں امید کرتے ہیں کہ آپ کو ہماری آج کی ویڈیو ضرور پسند آئی ہوگی اگر آپ کی ویڈیو پسند آئی ہے تو آپ سے گزارش کرتے ہیں کہ آپ ہمارے چینل اسلامی ٹیچر کو ضرور سبسکرائب کریں اور ساتھ ہی لگے ویل کے بٹن کو پریس کر لیں تاکہ آپ کے پاس ہماری آنے والی مزید معلوماتی ویڈیوز کا نوٹیفکیشن پر ملتا ہے سب کے ساتھ ساتھ ہماری ویڈیوز کولائک کریں اور اپنی قیمتی رائے کا اظہار کمنٹ ضرور کریں کمنٹس میں آپ اپنے سوالات بھی ہم تک پہنچا سکتے ہیں اللہ تعالی آپ کو اپنے حفظ و امان میں رکھے آمین مین

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*